چھوٹے کاروباری اداروں کے لیے ایک پریشان کن خبر! برطانیہ میں “دھوکے باز توانائی بروکرز” اربوں روپے کے نقصان کا باعث بن رہے ہیں،

برطانیہ چھوٹے کاروباری ادارے دھوکے باز توانائی بروکرز کا نشانہ: اربوں روپے کا نقصان

چھوٹے کاروباری اداروں کے لیے ایک پریشان کن خبر! برطانیہ میں “دھوکے باز توانائی بروکرز” اربوں روپے کے نقصان کا باعث بن رہے ہیں، جو چھوٹے کاروباروں کو غلط توانائی منصوبوں میں پھنسا کر ان سے زیادہ وصولیاں کر رہے ہیں۔

رپورٹس کے مطابق، یہ بروکرز چھوٹے کاروباروں کو سستی توانائی ڈیلز کا جھانسہ دیتے ہیں، لیکن حقیقت میں وہ انہیں ایسے منصوبوں میں شامل کر لیتے ہیں جو ان کی ضروریات کے مطابق نہیں ہوتے اور جن میں بروکرز کو زیادہ سے زیادہ کمیشن ملता ہے۔ یہ منصوبے اکثر لمبے عرصے کے لیے ہوتے ہیں، جس کا مطلب ہے کہ کاروبار مالکان زیادہ قیمت ادا کرنے پر مجبور ہو جاتے ہیں۔

کون سے کاروبار زیادہ متاثر ہیں؟

رپورٹس سے پتہ چلتا ہے کہ اس دھوکہ دہی کا سب سے زیادہ شکار چھوٹے کاروباری ادارے، خیراتی ادارے، کلیسا اور نگہداشت کے گھر ہیں۔ یہ ادارے اکثر توانائی کے معاملات میں ماہر نہیں ہوتے اور اس لیے ان کے فائدے کے لیے صحیح سودے بازی کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

** نقصان کا تخمینہ**

اندازوں کے مطابق، یہ دھوکہ دہدی برطانوی کاروباروں کو ہر سال اربوں روپے کا نقصان پہنچا رہی ہے۔ ایک اندازے کے مطابق، صرف 2023 میں ہی چھوٹے کاروباروں کو تقریباً £2 بلین (تقریباً 35 ارب روپے) کا نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

حکومت کیا کر رہی ہے؟

حکومت اس مسئلے سے آگاہ ہے اور اس نے چھوٹے کاروباروں کی مدد کے لیے اقدامات کیے ہیں۔ “غیر قانونی نقل مکانی ایکٹ 2023” ایسے ہی ایک اقدام کا حصہ ہے، جس کا مقصد توانائی بروکرز کو زیادہ شفاف بنانا ہے۔ تاہم، بعض ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ ایکٹ کافی نہیں ہے اور اسے مزید مضبوط بنانے کی ضرورت ہے۔

حکومت نے کہا کہ پہلی بار 50 سے کم ملازمین والی کمپنیاں توانائی کے محتسب سے مفت ازالے اور مدد تک رسائی حاصل کر سکیں گی تاکہ سپلائی کرنے والوں کے ساتھ تنازعات کو حل کرنے میں مدد مل سکے۔ توانائی کے سودوں کو ختم کرنا، مہنگے عدالتی طریقہ کار کے بغیر۔

قابل استطاعت اور مہارت کی وزیر، امانڈا سولووے نے کہا کہ یہ تبدیلی چھوٹے کاروباروں کو “بااختیار” بنائے گی اور اس بات کو یقینی بنائے گی کہ “ہماری مارکیٹ میں توانائی کے بروکرز کی کوئی جگہ نہیں ہے”۔

انرجی ریگولیٹر، Ofgem، کرے گا۔ کاروبار کو شامل کرنے کے لیے اس کے موجودہ قوانین کو وسعت دیں۔ 10 سے زائد ملازمین کے ساتھ تاکہ یہ اس موسم گرما سے ایسے سپلائرز کے خلاف کارروائی کر سکے جو چھوٹے کاروباری صارفین کے ساتھ منصفانہ سلوک نہیں کرتے۔

سال کے آخر تک آفجیم تمام سپلائرز کو انرجی ڈیلز کے ذریعے تھرڈ پارٹی بروکرز کو ادا کی جانے والی کسی بھی فیس اور کمیشن کو ظاہر کرنے پر مجبور کرے گا۔ سپلائی کرنے والوں کو بھی صرف تسلیم شدہ بروکرز کے ساتھ کام کرنے کی ضرورت ہوگی جو گاہک کے ازالے کی اسکیم کے لیے سائن اپ ہیں۔

کاروباری توانائی کی فراہمی کا معاہدہ رکھنے والی تقریباً ایک تہائی کمپنیاں اپنے سودے کو محفوظ بنانے کے لیے ایک بروکر کا استعمال کرتی ہیں، لیکن – رہن یا بیمہ کے سودوں کی مارکیٹنگ کرنے والے بیچوانوں کے برعکس – یہ توانائی کے درمیانی افراد بڑی حد تک غیر منظم ہیں۔

آپ اپنا بچاؤ کیسے کریں؟

اگر آپ ایک چھوٹے کاروباری ہیں تو آپ دھوکہ دہی سے بچنے کے لیے کچھ اقدامات کر سکتے ہیں:

  • کسی بھی توانائی منصوبے پر دستخط کرنے سے پہلے اس کا غور سے جائزہ لیں۔
  • مختلف کمپنیوں سے قیمتوں का موازنہ کریں۔
  • کسی معتبر توانائی مشیر سے مشورہ کریں۔

یہ ضروری ہے کہ آپ توانائی کے معاملات کو سنجیدگی سے لیں اور کسی بھی سودے پر دستخط کرنے سے پہلے اسے اچھی طرح سے سمجھ لیں۔

اپنا تبصرہ لکھیں